مرکزی صفحہ / فنی و ادبی حال (صفحہ 20)

فنی و ادبی حال

تنقید نگاری: ایک اچھی کاوش

جعفرخان ترین کوئٹہ کے جناح روڈ پر گوشہ ادب بالخصوص کبیر بلڈنگ کا سیلز اینڈ سروسز صرف کتابوں ہی کا مرکز نہیں بلکہ علمی اور ادبی مباحث کرنے والوں کا بھی ایک اچھا ٹھکانہ ہے۔ کئی بار ایسا ہوا کہ یہاں ملنے والے دوستوں سے بات چیت اور بحث کے …

Read More »

پھولوں سے الفاظ کی پیوندکاری تک!

محمد خان داؤد زرعی ماہر بنا اُس کا شوق تھا۔ شوق کیا تھا بس جنون تھا۔ پر وہ نہ بن پایا، یا بنتے بنتے رہ گیا، یا بنا بھی، یا نہیں!؟؟ یہ ایسے سوال ہیں کہ دل چاہتا ہے کی اس بات پر تحقیق کی جائے کہ وہ زرعی ماہر …

Read More »

معروف بلوچ ادیب غنی پرواز کو لائف ٹائم اچیومنٹ ایوارڈ سے نوازا گیا

نیوز ڈیسک کوئٹہ: جامعہ بلوچستان شعبہ بلوچی کے زیر اہتمام لائف ٹائم اچیومنٹ تقریب کا انعقاد ہوا۔ تقریب کے مہمان خصوصی جامعہ کے وائس چانسلر ڈاکٹر جاوید اقبال تھے۔ جس میں نامور ادیب منیر احمد بادینی، ڈاکٹر عبدالصبور بلوچ، عبدالرحیم مہر سمیت معروف ادبی شخصیات، طلبا و طالبات کی کثیر …

Read More »

خود کُشی

محمد خان داؤد میرا ذہن ماؤف ہوگیا تھا میں خود کُشی کا سوچ رہا تھا، کہ خود کُشی ہی کرلوں! دوستوں،یاروں، اور گھر والوں تک یہ خبر پہنچی سب نے اِس بے وقوفانہ کام سے روکا یار دوست منت کرنے لگے کہ یہ کام نہ کرنا! بہنیں بہت روئیں، ماں …

Read More »

گڈانی شپ بریکنگ کے شہید مزدوروں کے نام ایک نظم

مشتاق علی شان مزدور کی جھلسی لاش کا نوحہ اور نہیں اب اور نہیں سفاک دھویں، آکاش کا نوحہ اور نہیں اب اور نہیں محنت کے ذبیحے پر قائم سرکار سے شکوہ کوئی نہیں اس خون پہ پلتے فربہ بدن زردار سے شکوہ کوئی نہیں انصاف کے معبد میں لٹکی …

Read More »

گڈانی کے بعد نورانی ٹوٹے

شکور رافع کوئٹہ، گڈانی اور شاہ نورانی کے کرب نے تخلیقی جوہر مار سا دیا ہے۔ فنون لطیف کثیف دکھائی دیتے ہیں۔ کہانی گم سی ہو چکی۔ دل دلیلوں پہ اتر آیا ہے کہ رونا دھونا ہو چکا، یہ بتاؤ کہ تم ادیب سے پروپیگنڈہ سیکرٹری کب سے بن گئے۔ …

Read More »

مست ئے مسیت : بلوچستان!!

نوشین قمبرانی جب وجود پر ہست کی دائمی تنہائی کا گھیرا تنگ ہوتا ہے تو پیاسی روحوں کے لیے ایک ہی رستہ روشن ہوتا ہے: عشق کا رستہ ، وجود کی نجات کا رستہ۔ جو وجود کو سوز اور کیف میں غرق رکھتا ہے اور ابدیت کے رازوں تک لے …

Read More »

وہ جو دنیا کے جھملیوں سے دُور گئے تھے!

محمد خان داؤد وہ شہر کے شور سے دور گئے تھے وہ اپنے رشتے اور گھر بہت دور چھوڑ گئے تھے جہاں پر نہ گھر تھے، نہ رشتے دار تھے وہاں پر بس عشق ناچتا تھا، اور خوب ناچتا تھا! پر وہاں پر کیا تھا، جہاں وہ عشق اور شوق …

Read More »

لاہوت لہو لہو ہے!!

اعجاز منگی اب ہم لاہوتی سیف سمیجو سے کیا کہیں؟ ’’درد کی دُھن بناؤ! اور اداس گیت گاؤ!‘‘ گیت وہ لکھے گا کون؟ درد وہ سہے گا کون!؟ موسیقی کا ماتم ہے اور حدِ نظر غم ہے! ہر ساز سسکتا ہے ہر خیال بلکتا ہے!! وہ راگ جو روتا ہے …

Read More »

نور کی ایک علامت، نورانی

افضل مراد نور کی ایک علامت بابا تجھ سے اور اللہ سائیں سے کیسے کروں ان معصوموں، ان مجبوروں، ان مجذوبوں کی میں شکائت جو اپنے دکھ درد کا اپنی معذوری، مجبوری کا بس ذرا مداوا چاہتے تھے زندہ رہنا چاہتے تھے حیرت کی تصویر بنے یوں اپنی بات پہ …

Read More »