مباحث

کپٹلزم کے رنگ روپ

شاہ محمد مری تاریخی مادیت کے کسی طالب علم کایہ دیکھ کر دماغ چکرا جاتا ہے کہ بڑی بڑی منڈیوں کے لیے پیاسے کپٹلزم (کے ہیڈ کوارٹر امریکہ) میں ایک شاؤنسٹ نیشنلسٹ شخص صدارتی الیکشن جیت جائے۔ یہ بات آپ کس طرح کسی فارمولے میں ٹھونس کرفٹ کر پائیں گے …

Read More »

کتابوں سے محبت کرنے والے!

شیخ خالد زاہد یوں تو یہ بات طے ہے کہ محبت کرنے والے کائنات کی ہر شے سے محبت کرتے ہیں، یہ محبت کرنے والے درحقیقت کائنات کے تخلیق کرنے والے کے سچے عاشق ہوتے ہیں۔ تبھی تو یہ اپنے معشوق کی ایک ایک تخلیق سے محبت کرتے چلے جاتے …

Read More »

پاکستان ٹوٹنے کے ذمہ دار کون؟!

انور عباس انور سولہ دسمبر دن متحدہ پاکستان ( مشرقی اور مغربی پاکستان ) کے حصہ مشرقی پاکستان کے عوام نے ہمارے ازلی دشمن بھارت کے تعاون سے ہم ( مغربی پاکستان ) سے الگ ہونے کا فیصلہ کیا بلکہ الگ ہوگئے۔ اس دن کو پاکستان کی تاریخ میں وہ …

Read More »

سہمی ہوئی ریاست میں باپ ڈرتا ہے!

وجاہت مسعود ڈیرہ اسمعیل خان سے ژوب کی طرف جائیں تو درازندہ کا نیم قبائلی گاؤں آتا ہے۔ درازندہ میں لکڑیاں بیچنے والے سعداللہ شاہ کا بیٹا قاسم شاہ محکمہ زراعت کے تربیتی مرکز میں تعلیم پا رہا تھا۔ سعداللہ شاہ امید لگائے تھا کہ قاسم شاہ برسرروزگار ہو کر …

Read More »

ریاست، تہذیب و مذہب اور نظریات کی جنگ

فہد عبدالعزیز بلوچ عوام ریاست کا ترجمان ہوتا ہے۔ عوام کا طرزِ زندگی ریاست کی ترجیحات کا تعین کرتا ہے۔ ریاست میں مذہب کا عمل دخل آج سے نہیں بلکہ پھتر کے دور اور مختلف تہذیبوں سے چلتی آ رہی ہے۔ ساؤتھ ایشیا کے لوگ دنیا میں مذہبی جذبات رکھنے …

Read More »

بلوچستان پبلک سروس کمیشن کے اہم انقلابی فیصلے

عبدالباری مندوخیل سوشل میڈیا پر بی پی ایس سی کے افیشل پیج BPSC Jobs پر اخبار میں اشاعت سے قبل اسسٹنٹ کمشنر اور سیکشن افیسر کے 63 خالی اسامیوں کا اشتہار اتے ہی بلوچستان کے باصلاحیت طالبعلموں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی۔ اور فیس بک پر اسکی شیئرنگ ٹاپ …

Read More »

جنگ اور محبت میں سب جائز نہیں ہوتا!

اقبال خورشید ’’جنگ اور محبت میں سب جائز ہونے کا فلسفہ جھوٹ ہے، صرف جائز ہی جائز ہوتا ہے۔‘‘ یہ اُجلے الفاظ، جو ذہن کی کایا کلپ کر دیں، ایک قدیم اصول کا سحر توڑ ڈالیں، ڈاکٹر شاہ محمد مری کے ہیں۔ ایک طبیب کے، جو قلم اور نشتر، ہر …

Read More »

بلوچستان، صحافت کا قبرستان

عابد میر بلوچستان کا نام آتے ہی، بیرونِ بلوچستان قاری کے ذہن کے پردے پر جو شبیہیں ابھرتی ہیں اُن میں یا تو خون آلود سڑکوں کا منظر ہوگا، یا آب و گیاہ پہاڑوں، چٹانوں اور چشموں کا، یا ایک ایسے جزیرہ نما کا جو اب تک کسی غیر دریافت …

Read More »

پاکستانی مارکسزم اور بلوچ قومی سوال

ذوالفقار علی زلفی کامریڈ شاداب مرتضی صاحب نے جب میرے مندرجات پر بحث کرنے سے زیادہ مجھے منافقت، دروغ گوئی، موقع پرستی اور ملائی ترمیم پسندی کے "منصب” پر بٹھانے کے لیے زورِ قلم دکھایا تو مجھے چنداں حیرت نہ ہوئی ـ پاکستانی حب الوطنی اور بلوچ حقِ آزادی کے …

Read More »

مارکسزم یا "مارکسی” نیشنلزم؟

شاداب مرتضی رفیق ذوالفقار علی ذلفی نے اپنے مضمون کے آخری حصے میں تمہید کے طور پر اپنا نکتہ نظر مزید وضاحت سے پیش کر کے یہ ثابت کرنے کی کوشش کی ہے کہ ہم بلوچ تحریک سے درست واقفیت نہیں رکھتے اور اس کی جانب ہمارا رویہ مارکسی نہیں۔ …

Read More »