مرکزی صفحہ / محمد خان داؤد (صفحہ 5)

محمد خان داؤد

محمد خان داؤد
کراچی میں مقیم محمد خان داؤد سندھی اور اُردو صحافت کا وسیع تجربہ رکھنے کے بعد اب بہ طور فری لانسر کام کرنے اور لکھنے کو ترجیح دیتے ہیں۔ سندھ-بلوچستان کے مشترکہ مسائل اور درد پہ لکھنے کا یارا رکھتے ہیں۔ Email:dawood.darwesh@yahoo.com

آؤ، اُن پہاڑوں کے دامن میں چلیں!

محمد خان داؤد یہ ساد بیلے کی دیواریں ہیں۔ ساد بیلا سکھر میں دریا کے کنارے ایک مندر ہے۔اس کے پاس دریا بہہ رہا ہے۔ لوگ اس ساد بیلے میں کشتی سے آتے ہیں۔ اور کوئی راستہ نہیں کہ لوگ اس ساد بیلے آئیں۔ ساد بیلے میں ویسے تو سالانہ …

Read More »

غمگین۔۔۔۔۔ایسے کہ جیسے تیرے نمازی!

محمد خان داؤد یہ نام، یہ القاب، جسم کی طرح اُس انسان کے ساتھ ہمیشہ کیوں رہتے ہیں؟ جو انسان اس نام کی تختی، ان القابات کی کئی تختیاں اپنے ساتھ جوڑے رکھتے ہیں! پر اصل میں وہ وہ نہیں رہتے تو پھر ان سے وہ نام، وہ القابات کیوں …

Read More »

اب میرے ہاتھوں میں تو دعاؤں کی قندیل بھی نہیں!

محمد خان داؤد میری بہن! میری بیٹی! میری ماں! اب میرے ہاتھوں میں تو دعاؤں کی قندیل بھی نہیں! جو تمہیں دے پاؤں! ایسی دعائیں جو موسیٰ کو خدا نے دیں اور موسیٰ نے اہلِ اسرائیل کو جو مسیع کو مریم نے دیں اور مسیع نے اپنے شاگردوں کو ایسی …

Read More »

شکریہ پرویز ہُود بائی، حامد میر!

محمد خان داؤد اُوشو نے لکھا ہے کہ "سچ کو سچ ثابت کرنے کے لیے بہت رونا پڑتا ہے۔ پھر بھی اُس سچ کا اعتبار نہیں کیا جاتا جو سچ ہوتا ہے.” وہ دکھ سچ ہیں۔ جو سندھ اور بلوچستان کے مشترکہ دکھ ہیں۔ وہ دکھ جو کسی کو بھی …

Read More »

بچے اُداس ہیں!

محمد خان داؤد میڈم بلقیس ایدھی اپنے لہجے کی گلابی اردو میں! اب تو اتنی بھی شکایت نہیں کرتی جتنی شکایت سندھی کے میلوڈی شاعر استاد بخاری نے کی تھی کہ کھلیں پُچھیں تھوں تہ کئیں ھلیں تھو؟!!! جئیں ھلیں تھو جھان جانی!!! "تم ہنس کے پوچھتے ہو کہ کیسے …

Read More »

اُداس جوتوں کی خبر لو!!!

محمد خان داؤد میرے کانوں میں آج بھی استاد بخاری کا یہ گیت ماتم بن کر گونج رہا ہے "پیار دریا آ دریا بھی لٹجی تھو وجین! نیٹھ انسان آ انسان بھی مٹجی تھو وجین! قدر نا ہتھے ہتھے تہ سچو سون بہ مٹیجی تھو وجین!” پیار دریا ہے دریا …

Read More »

بابا میرا جسم تختی بنا ہے!

محمد خان داؤد بابا گھر میں موجود میری ساری کتابیں جلا دو! جلا دو ان کتابوں کو جو میرا وقت ضائع کرتی تھیں جو مجھے ذلیل کرتی تھیں جو مجھے خوار کرتی ہیں جن کتابوں نے مجھے آپ کی خدمت کرنی نہیں دی ان کتابوں کی وجہ سے میں نے …

Read More »

روندیں عُمر نبھائی، یار دی خبر نہ کائی!

محمد خان داؤد اُن کے ہاتھوں میں یا تو مائیک ہوتا تھا یا وہ بینرز جنہیں وہ لیے کبھی سفر میں ہوتا تھا۔ جس مائیک سے وہ سیاسی ادب سے بھری تقاریر کیا کرتا تھا۔ جن میں وہ فیض سے لیکر ٹیگور تک اور حلیم باغی سے لیکر جالب تک …

Read More »