مرکزی صفحہ / اداریہ / بلوچستان سے حال حوال

بلوچستان سے حال حوال

انسان بولتا ہے، تبھی حیوانِ ناطق کہلاتا ہے۔ یہ محض حیوان ہی رہ جاتا ، اس کا بولنا اگر بامعنی مکالمے میں نہ ڈھلتا۔ اوراہلِ بلوچستان کا سب سے بامعنی مکالمہ ان کا ’حال حوال‘ ہی تو ہے۔ بلوچستان میں رائج اس مخصوص ثقافتی اصطلاح کاابلاغی ترجمہ کریں وہ کچھ یوں بنے گا:’خبر اور تبصرہ۔‘ جسے انگریزی میں ’نیوز اینڈ ویوز‘یا ’نیوز اینڈ اوپینین‘ کہیں گے۔

ہمارے خطے کے مرکزی ذرائع ابلاغ میں بلوچستان سے متعلق آگاہی کے فقدان کا شکوہ توکب کازبان زدِ عام ہو چکا، اب اس کے متبادل پہ بات ہونی چاہیے۔ سوشل میڈیا کے تیز رو سیلاب نے اس متبادل کی تعمیر کو سہل تو بنایا مگر اس کے غیر ذمہ دارانہ استعمال نے ذمہ داری بھی کئی گنا بڑھا دی ہے۔ہمیں بلوچستان کو مرکزی بیانیے میں مکالمے کا حصہ بنانے کے فرض کے ساتھ ساتھ،مکالمے میں شائستگی کی ذمہ داری کا احساس بھی ہے۔

سیاسیات، سماجیات، ادبیات سے لے کر ہر میدان میں ہمارا مطمع نظر بلوچستان ہے۔ اور بلوچستان ظاہر ہے کہ خلا میں وجود نہیں رکھتا، اس کے اردگرد انسانی آبادیاں ہیں، مسلسل اتھل پتھل والے انسانی خطے ہیں۔ اس لیے ان سب سے باخبر رہنا بھی ضروری ہے۔ ہم ان سے باخبررہتے ہوئے انھیں اپنے خطے سے متعلق باخبر رکھنے کی کوشش کریں گے۔

images (1)

بنا کسی دعوے داری کے نہایت عاجزی کے ساتھ ہم اس خیال سے ’حال حوال‘ لے کر آ رہے ہیں کہ بلوچستان سے متعلق وہ سب کچھ بتایا جائے، جسے بوجوہ چھپایا جاتا ہے۔ اسی غرض سے ’حال حوال‘ کا نکتہ نظر ہے:’سب کچھ سب تک!‘ یعنی سب کو سب کچھ بتایا جائے، مگرکوئی بھی موقف اختیارکرنے اورآزاد رائے رکھنے کی آزادی سب کو حاصل ہو۔

ایک دوسرے کی رائے کا احترام کیا جائے۔اختلافِ رائے کو دشمنی سے محلول نہ کیا جائے۔ اس بات کو سمجھا جائے کہ کوئی شخص ہم سے مختلف ہو کر بھی مخلص اور اچھا آدمی ہو سکتا ہے۔ ہر اختلاف نے بالآخر مکالمے ہی کی راہ اختیار کرنی ہے۔

مکالمہ ہی ایک دوسرے کو سمجھنے اور سمجھانے کا حتمی طریقہ کار ہو گا۔ اس لیے بامعنی اور شائستہ مکالمے کا فروغ ہم سب کے حق میں ہے۔

توآئیے‘ حال حوال کریں!

Facebook Comments
(Visited 394 times, 1 visits today)

متعلق ایڈیٹر

ایڈیٹر
  • Parveen Naz

    We always wish Haalhawal for the best future and success. Hope the team will continue the work with same committment and thoughts

  • Please accept my heartfelt congratulations over the launch of this much-needed online newspaper. I highly commend your efforts and wish you good luck. Also, special thanks for devoting this paper to our dear friend Irshad Masthoi who set the standards of journalistic professionalism very high. He was a hero of our time and lost his life in the line of duty.

  • Iqbal Hasan

    Congratulations and prayers for haalahwal.

  • عابد جان، میں ہمیشہ سے آپکی صلاحیتوں کا معترف رہا ہوں۔ مجھے امید ہے کہ ’’خانہ بدوش‘‘کے ساتھ ساتھ اس فورم پر بھی بلوچستان کے مسائل کی نشاندہی اور انکے حل تجویز کرتے رہیں گے۔ میرا ہرممکن تعاون آپکے ساتھ رہے گا۔ بہت ساری محبت اور نیک تمنائیں

  • مهر تورانی

    میر صاحب،
                  بلوچستان انسانی اورمعد نی وسائل سے ایک زرخیز علاقہ، یہ اپنی زرخیزی کی وجہ سے دنیا بھرمیں مشہور و معروف ہے

  • رانا محمد آصف

    ہمارا مین اسٹریم میڈیا اب سماج کے ہر طبقے کی جانب سے غیر ذمے داری اور سطحیت کی شکایت کی زد میں ہے۔ یہ شکایات بے بنیاد نہیں لیکن سوال یہ ہے کہ کوئی بھی زندہ سماج کیا خود کو مکمل طور پر کسی کے سپرد کرکے زندہ کہلانے کا حق دار بھی ہے۔ سوشل میڈیا کی صورت میں جو متبادل ذریعہ ابلاغ سامنے آیا اس میں سب سے پہلے جس چیز پر سمجھوتا ہوا وہ حقائق کی درستگی اور اطلاعات کی ’’صحت‘‘ کا ہے۔ لیکن یہ بات بھی تسلیم کرنی چاہیے کہ گذشتہ کچھ عرصے میں انٹرنیٹ کے ذریعے ویوز اینڈ نیوز کی ویب سائٹس پر بہت کم عرصے میں کئی سنجیدہ کاوشیں ہوئی ہیں۔ اور امید ہے کہ ’’حال حوال‘‘ بھی اپنے اسی عزم کے ساتھ آگے بڑھے گا۔ بہت سی نیک تمناؤں کے ساتھ ۔