مرکزی صفحہ / سیاسی حال / پنجگور: جے یو آئی کے زیراہتمام علما کانفرنس کا انعقاد

پنجگور: جے یو آئی کے زیراہتمام علما کانفرنس کا انعقاد

رفیق چاکر

جمیعت علمائے اسلام کے زیراہتمام مرکزی جامعہ مسجد چتکان، پنجگور میں علما کانفرنس کا انعقاد کیا گیا جس میں علما کرام اور طلبا سمیت ورکرز کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی.

علما کنونشن میں افغانستان میں حفاظ اور علما کرام پر بمباری کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی اور شہدا کے لیے دعائے مغفرت کی گئی. شرکا سے خطاب کرتے ہوئے مفتی مکران مفتی مولا بخش، حافظ محمد اعظم بلوچ، حاجی عبدالعزیز، مولانا علی احمد، حاجی محمد یاسین، حاجی عطااللہ بلوچ، مولانا عبدالحلیم، مولانا عبیداللہ، مولانا سعداللہ، مولانا مفتی محمد آصف عثمان، مولانا عبداللہ، قاضی عطااللہ بلوچ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ انسان ہر چیز میں اپنے آپ کو اللہ پاک کے حوالے کر دے اور خصوصا وہ علما کرام جنہوں نے علم حاصل کیا ہے وہ اپنی تمام زندگی اور ہر عمل کو رب پاک کے حوالے کریں. علما کرام نے رب پاک سے یہ وعدہ کیا ہے کہ ہم علم حاصل کر کے اس پر عمل کر کے اللہ کے رسول کی اطاعت کریں گے. مال کے پیچھے بھاگنا علما کرام کا شیوہ نہیں.

انہوں نے کہا کہ خلافت کے آنے کے بغیر اسلامی نظام کا نفاذ ناممکن ہے اور خلافت کے حصول کے لیے معاشرے کے ہر فرد خصوصاً علما کرام کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا. ووٹ سے کسی کو سربراہ مقرر کرنا شرعاً جائز نہیں اور معاشرے میں زانی، شرابی اور مجنوں سمیت سب کو معاشرے میں ووٹ دینا کا حق دیا گیا ہے، اس طرح کے لوگوں کے ووٹ سے کامیاب ہونے والے اصل حکمران نہیں بن سکتے لیکن پارلیمنٹ میں ہوتے ہوئے اسلام کے خلاف ہونے والی ہر سازش کو کامیاب بنایا جا سکتا تو اسی لیے علما کرام کا پارلیمنٹ میں ہونا ضروری امر ہے. علما کرام کے ساتھ شامل نہ ہونے والے سب باطل کے ساتھ ملے ہوئے ہیں.

ان کا کہنا تھا کہ پرویز مشرف اپنے دور میں سیکیولر نظام کو لانے کے خواہاں تھے اور انہوں نے اعلان بھی کیا تھا لیکن پارلیمنٹ میں اس نظام کے خلاف سب سے پہلے مولانا فضل الرحمن نے آواز بلند کی. جب علما کرام جس دور میں سیاست سے کنارہ کش ہو رہے ہیں تو وقت کے فرعونوں نے اُن پر مظالم کے پہاڑ توڑ دیے ہیں. اسلامی تجارت اور بینکاری پر کام ہو رہا ہے اور علما کرام اس میں اپنا حصہ ڈالیں. اس قوم کو ایک سیاسی اور شعوری فکر دینا ہے.

ان کا کہنا تھا کہ آج کے دور میں سیاست کو دروغ گوئی کا نام دیا گیا ہے لیکن جمیعت کی سیاست اس کے برعکس ہے بلکہ علما کرام نے دروغ گوئی کی سیاست کو تبدیل کر کے حق اور سچ کو فروغ دیا ہے. اس وقت جمیعت کے رہنما مولانا فضل الرحمن یہود اور غیرمسلموں کے مقابلے میں ایک سیسہ پلائی دیوار کی طرح کھڑے ہیں. علما کرام کا فرض ہے کہ وہ اسلامی نظام کے نفاذ کے لیے جدوجہد کے پیغام کو گھر گھر تک پہنچائیں.

Facebook Comments
(Visited 17 times, 1 visits today)

متعلق رفیق چاکر

رفیق چاکر
پنجگور میں مقیم رفیق چاکر گزشتہ کئی سالوں سے صحافت کے شعبے سے وابسطہ ہیں، سماجی مسائل پر قلم کشائی کرتے ہیں۔ بلوچی زبان میں افسانے بھی لکھتے ہیں۔