مرکزی صفحہ / بلاگ / بی این پی، سینٹ الیکشن اور نظریاتی سیاست کا انہدام

بی این پی، سینٹ الیکشن اور نظریاتی سیاست کا انہدام

وحید بلوچ
سابق اسپیکر بلوچستان اسمبلی

بلوچستان نیشنل پارٹی کی جانب سے ہمایوں کُرد کو سینیٹ کی ممبرشپ کے لیے نامزدگی پر نہ تو تعجب ہوا اور نہ ہی افسوس۔ کیونکہ بلوچستان اسمبلی مییں قدوس بزنجو کو ووٹ دینے کے بعد اب پارٹی کی جانب سے ایسے فیصلے اچھنبے کی بات نہیں رہے۔

پارٹی میں ان نوواردگان کا ابھی چلہ بھی پورا نہیں ہوا ہے کہ ان کی بڑی بڑی تصویریں پارٹی میٹنگوں اور دفاتر میں آویزاں ہو گئی ہیں اور وہ پارٹی کے منصب دار ہوگئے ہیں۔ حیف ہے ان بزعمِ خود پارٹی لیڈروں پر جو پارٹی میٹنگوں میں بیٹھ کر اس طرح کے ناشائستہ اور لاپرواہ فیصلے کر کے بلوچستان نیشنل پارٹی کی اساس اور اصولی بنیادوں پر وار کر کے اس کو مسلم لیگ اور پیپلزپارٹی کی مقام پر لے جا رہے ہیں۔

بی ایس او اور بی این پی کے وہ نظریاتی دوست جن کی محنت اور اپنی فکر سے وابستگی نے اس پارٹی کو بلوچ سیاست میں ممتاز مقام عطا کیا، آج اس پارٹی کو ایسے لوگوں نے یرغمال بنا رکھا ہے جو اغیار کے ہاتھوں بک کر بلوچ سیاست میں اس ممتاز پارٹی کو ادنیٰ جماعت بنانے پر تلے ہوئے ہیں اور دھیرے دھیرے اسے اپنے اہداف اور فکر سے دور لے جا رہے ہیں۔

ان فیصلوں کی وجہ سے اب بی این پی محض ایک اور پاکستانی جماعت بن کر رہ گئی ہے۔ پاکستان مسلم نواز کا مشاہد حسین کو سینٹ کا ٹکٹ دینے اور بی این پی کا ہمایوں کرد کو ٹکٹ دینے میں کوئی فرق نہیں۔

بلوچستان نیشنل پارٹی میں اب بھی ایسے ہزاروں کارکن ہیں جو بلوچستان کا کیس بہت ہی بہتر انداز میں پیش کر سکتے ہیں اور ان کی وابستگی اور استقامت کس شبے سے بالا ہے۔ ان کو نظرانداز کر کے صرف اور صرف مالی حیثیت کو مدنظر رکھ سینٹ کی نامزدگی کا تعفن اور بدبو اس جماعت کو آہستہ آہستہ گٹر کی جانب لے جائے گا اور قیادت ان لوگوں کے ہاتھ آ جائے گی، جن کا بلوچ سیاست اور پارٹی کے آدرشوں سے دور تک کا تعلق نہیں ہوگا۔

اخترمینگل کے لیے آج بھی میرے دل میں احترام ہے لیکن یوں لگتا ہے کہ ان کی فیصلہ کرنے کی صلاحیتیں زنگ آلود ہو گئی ہیں یا ایسے فیصلہ کن موقعوں پر وہ دانستہ موجود نہیں ہوتے اور یا وہ ان لوگوں کی مشاورت قبول کرتے ہیں جن کا کام اس جماعت کو اس مقام پر پہنچانا ہے جو پاکستان کی دوسری عام جماعتوں جیسی ہو۔

فکری اور نظریاتی کارکن ہی بحث و مباحث کے ذریعے اس جماعت کو زوال پذیر ہونے سے روک سکتے ہیں اور پارٹی ایسےوقت میں ان ہی کارکنوں کی توجہ کی طالب ہے۔

Facebook Comments
(Visited 99 times, 1 visits today)

متعلق وحید بلوچ

وحید بلوچ
وحید بلوچ ماضی کے متحرک سیاسی کارکن رہے ہیں۔ بلوچستان اسمبلی کے اسپیکر رہ چکے ہیں۔ گذشتہ دو دہائیوں سے امریکہ میں مقیم ہیں۔ بلوچستان کی سیاسیات و سماجیات پہ آج بھی گہری نظر رکھتے ہیں۔