مرکزی صفحہ / فنی و ادبی حال / پسنی: اکرم صاحب خان اور آئی بی کی یاد میں تعزیتی ریفرنس

پسنی: اکرم صاحب خان اور آئی بی کی یاد میں تعزیتی ریفرنس

عبدالحلیم

ایجوکیشن فار آل فورم اور ازم آزمان پسنی کے زیراہتمام پسنی کے ادیب و صحافی اکرم صاحب خان اور آئی بی کی یاد میں پسنی ویلفیئر کلب میں تعزیتی تقریب کا انعقاد کیا گیا۔
تقریب کے مہمانِ خاص چیئرمین بلدیہ پسنی حکیم چیف تھے۔

تعزیتی تقریب میں مرحومین کی ادبی اور صحافی خدمات پر مقالے پیش کیے گئے۔ مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صحافی اور ادیب معاشرے کے حساس ترجمان ہیں۔ اکرم صاحب خان اور آئی بی پسنی کے دو ایسے سپوت تھے جن کی خدمات کو کبھی بھی فراموش نہیں کیا جا سکتا۔

اکرم صاحب خان کی ادبی اور صحافتی خدمات کا احاطہ کرتے ہوئے مقررین کا کہنا تھا کہ اکرم صاحب خان اپنے فن اور پیشہ ورانہ خدمات کی وجہ سے غیرمعمولی صلاحیتیوں کے مالک تھے۔ اکرم صاحب خان نے ہمیشہ بے لاگ اور اصول پسندانہ صحافت کو ترجیح دی، لالچ اور چمک سے ان کے قدم کبھی بھی نہیں ڈگمگائے، پسنی میں ان کا شمار صھافت کے بنیادگزاروں میں ہوتا ہے۔

جب کہ صحافتی ذمہ داریوں کے علاوہ فنون کے شعبہ میں بھی اکرم صاحب خان ایک لامتناعی کردار کی شخصیت کے طور پر اپنی گہری پہچان چھوڑ چکے ہیں۔ بلوچی طنزح و مزاح کی شاعری کی صنف کا شاید ان سے کوئی اور بہتر ادراک نہیں رکھتا تھا۔ اپنی مزاحیہ شاعری اور ڈرامہ نگاری کے فن سے وہ بلوچی ادب کی مزاحیہ شاعری اور فن کو نئی جہت اور جلا بخشنے کا کام بخوبی کرتے رہے ہیں۔ اکرم صاحب خان اپنی ذات میں انجمن تھے۔

مرحوم آئی بی کی پیشہ ورانہ خدمات کے حوالے سے مقررین کا کہنا تھا کہ مرحوم اپنی پیشہ ورانہ ذمہ داریوں کی ادائیگی میں انتہائی سنجیدہ تھے۔ جب تک دنیا میں رہے اپنی پیشہ ورانہ ذمہ داریوں کو کماحقہ طور پر ادا کیا اور عوامی مسائل کے ہر گوشے کو اپنے قلم سے اجاگر کرتے رہے۔ آئی بی کی صحافتی زندگی پر اہلیانِ پسنی کو ناز ہے اور رہے گا۔

مقررین نے کہا کہ افسوس ہے کہ غیرمعمولی صاحیت کے حامل اکرم صاحب خان اور آئی بی جیسی شخصیات انتہائی کسمپرسی کی حالت میں بیماری کا مقابلہ کرتے ہوئے اس جہاں سے کوچ کرگئے، جو ان اداروں کی بے حسی اور عدم دلچسپی کو ظاہر کرتی ہے جو ادبی اور پیشہ ورانہ حامل شخصیات کی حوصلہ افزائی کا مینڈیٹ رکھتی ہیں، حیف کہ وہ بے توقیر رہے۔

مقررین نے کہا کہ اکرم صاحب خان اور آئی بی جیسی شخصیات کو کبھی بھلایا نہیں جا سکتا، ان کا ادبی اور پیشہ ورانہ ورثہ ہمہ وقت ادب اور صحافت کے پیشہ سے وابستہ افراد کی رہنمائی کرتا رہے گا۔

مقررین میں چیئرمین حکیم چیف، گوادر پریس کلب کے صدر بہرام بلوچ، پسنی پریس کلب کے صدر ساجد نور، صحافی غلام یاسین، کالم نگار و بلاگر ظریف بلوچ، ریٹائرڈ بنک افسر عبدالواحد، نوجوان ادیب بالاچ قادر، عادل سجاد اور اویس میر شامل تھے۔

تقریب میں مرحوم اکرم صاحب خان کے فرزند ساحل اکرم نے اپنے مرحوم والد کے مزاحیہ اشعار بھی پڑھ کر سنائے۔

نوجوان بلاگر ظریف بلوچ نے بلدیہ پسنی کو تجویز پیش کی کہ اکرم صاحب خان کی خدمات کے اعتراف میں شہر میں تعمیر ہونے والے یادگاری چوک کو مرحوم کے نام منسوب کیا جائے۔

تقریب میں پسنی کے مختلف مکاتبَ فکر کے افراد کی کثیر تعداد کے علاوہ گوادر کے صحافیوں نے بھی شرکت کی۔

تقریب کی نظامت کے فرائض ازم آزمان پسنی کے عرفان اسلم نے ادا کیے۔

Facebook Comments
(Visited 39 times, 1 visits today)

متعلق عبدالحلیم

گوادر میں مقیم عبدالحلیم کل وقتی صحافی ہیں۔ مقامی مسائل کی کوریج میں دلچسپی رکھتے ہیں۔ صحافت اور ادب کے امتزاج سے کام کو ترجیح دیتے ہیں۔ Email: haleemhayatan@gmail.com