مرکزی صفحہ / سماجی حال / کیچ میں بجلی کا بحران بدستور برقرار، سہولیات کا فقدان

کیچ میں بجلی کا بحران بدستور برقرار، سہولیات کا فقدان

یلان زامرانی

گرمیوں میں تو کیچ سمیت پورے ملک میں بجلی کا بحران سر اٹھاتا ہے، لیکن اب سردی ہونے کے باوجود بھی کیچ میں بجلی کا بحران بدستور جاری ہے جس کی وجہ سے عوام کو مشکلات کا سامناہے.

صبح سے لے کر شام تک تقریباً ایک گھنٹہ بجلی آتی ہے اور دو دو گھنٹے تک غائب ہوتی ہے.

نیب کی جانب کیچ میں کاروائی کی گئی اور بجلی نادہندگان کے خلاف اقدامات بھی اٹھائے گئے. اب عوام کی اکثریت بجلی بل ادا کر رہی ہے لیکن بجلی کا بحـران زور وشور سے جـاری ہے. اگر سردیوں میں بجلی کایہ حال ہو تو گرمیوں میں جب سینٹی گریڈ 45 تک جاتی ہے تو عوام کے لیے زندگی گزارنا مشکل ہو جاتا ہے.

کیچ کو اس بحران سے نجات دلانے اور اس مسئلے کو مستقل بنیادوں پر حل کرنے کی اشد ضرورت ہے.

کیچ کی ترقی کے بلندوبانگ دعوے اور کیچ ماڈل سٹی کے نام سے پروجیکٹس تو اپنی جگہ لیکن کیچ کے عوام کی تقدیر میں نہ جدید سہولیات سے میسر سرکاری ہسپتال ہے اور نہ ہی تعلیمی و ٹیکنیکل ادارے، سوائے اس کے کہ گلیوں میں سڑکوں پر ڈامبر بچھا کر عوام کو بیوقوف بنانے کی کوشش کی گئی ہے.

اس وقت کیچ (تربت) کو بلوچستان کی دوسری بڑی آبادی والا ضلع شمار کیا جاتا ہے. یہ سابق وزیراعلیٰ ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ کا مسکن بھی ہے، لیکن اس وقت چند سڑکوں کی تعمیرات اور چند چوکوں کو ڈیزائن کرنے کے علاوہ دیگر شعبوں تعلیم، اور صحت کے مسائل جوں کے توں ہیں جن پر کسی کی دلچسپی دکھائی نہیں دیتی. کسی بھی معاشرے کی بنیادی ضروریات میں سے تعلیم اور صحت مند معاشرے کا ہونا نہایت ضروری ہے.

آج بھی کیچ کی دیگر تحصیلوں بلیدہ، تمپ، دشت اور دیگر علاقے قرونِ اولیٰ کا منظر پیش کر رہے ہیں.

Facebook Comments
(Visited 22 times, 1 visits today)

متعلق یلان زامرانی

یلان زامرانی
کیچ کے رہائشی یلان زامرانی قلمی نام سے لکھتے ہیں۔ "رُژن" کے نام سے ایک ماہنامہ بھی چھاپتے ہیں۔ بلوچستان کے سیاسی، سماجی مسائل ان کی دلچسپی کا خاص موضوع ہیں۔