مرکزی صفحہ / علمی حال / نصیرآباد ڈویژن میں یونیورسٹی لٹیروں کی ہتھے چڑھ گئی!

نصیرآباد ڈویژن میں یونیورسٹی لٹیروں کی ہتھے چڑھ گئی!

انور بلوچ

مسلم لیگ ن کی پچھلی ڈھائی سالہ مخلوط حکومت میں شامل قوم پرستوں کے کیے گئے وعدے مکمل نہ ہو سکے۔

پورے بلوچستان میں مختلف اضلاع میں مختلف جامعات کا اعلان خوش آئند بات تھی لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ نام نہاد قوم پرستوں کے ساتھ علاقائی کٹھ پتلی نمائندگان نے عوام کے زخموں پر نمک پاشی کرنے کے علاوہ کچھ بھی نہیں کیا۔

2016 کے مختلف ترقیاتی منصوبوں میں بلوچستان کے مختلف علاقوں میں یونیورسٹیوں کا اعلان کرنے والوں نے سبز باغ دکھانے کے سوا کچھ بھی نہیں کیا۔ مل جل کر پیسے بٹورنے والوں نے ایک بار پھر سے عوام کو مایوس کر دیا۔

نصیر آباد ڈویژن میں مختلف حکومتوں میں بڑے پیمانے پر ترقیاتی منصوبوں کا اعلان کرنا محض ایک رسم بن چکی ہے، ان منصوبوں کی تکمیل کا نام تک نہیں۔

پی پی پی کے دورِ حکومت میں شامل منصوبوں میں نصیرآباد ڈویژن میں کوم سیٹس، آئی ٹی یونیورسٹی اور ڈگری کالج اوستہ محمد کو یونیورسٹی کا درجہ دینے کا وعدہ محض ایک سراب ہی رہا۔

ایک بار پھر اتحادی حکومت نے نصیرآباد ڈویژن کے لیے لسبیلہ یونیورسٹی کیمپس کا اعلان کر کے یہاں کے عوام کو خوشی سے ہم کنار کر دیا۔ یونیورسٹی کا نام سن کر عوام جھوم اٹھی لیکن ہائے یہ بدقسمتی کہ ان کے خواب ادھورے رہ گئے۔

نصیرآباد ڈویژن، ڈیرہ مراد جمالی میں ایگریکلچر یونیورسٹی کا کام شروع نہ ہونے کے اسباب میں علاقائی سیاسی جماعتوں اور منتخب نمائندوں کی عدم توجہ اور کرپشن اہم ہیں۔

بلوچستان کے نئی مختلف بننے والی یونیورسٹیوں کی کلاسز کا وقت پر اجرا قابلِ تحسین عمل ہے لیکن ایگریکلچر یونیورسٹی ڈیرہ مراد جمالی میں یونیورسٹی نہ ہونے کے ساتھ کلاسز میں تاخیر قوم پرستوں کے ساتھ علاقائی منتخب نمائندگان کے منہ پر طمانچہ ہے۔

بحیثیت پاکستان کا شہری اور نصیرآباد بلوچستان کا رہائشی تمام سول سوسائٹی، سیاسی و سماجی،صحافی حضرات، مذہبی جماعتیں، طلبا الائنسز، علاقائی میر و معتبر، سوشل ایکٹوسٹس باقی رضاکارانہ طور پر کام کرنے والوں سے گزارش کرتا ہوں کہ نصیرآباد ایگریکلچر یونیورسٹی کمپیس بنے تک سوشل میڈیا کے ساتھ باقی سورسز پر مظاہرے کیے جائیں گے، ہمارا ساتھ دے کر اس کارِ خیر میں حصہ لیں تاکہ یونیورسٹی تعمیر کے بعد بلوچستان بالخصوص نصیرآباد ڈویژن کے عوام کو تعلیم حاصل کرنے کے اچھے مواقع فراہم ہو۔

بڑے افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ بلوچستان کا واحد گرین بیلٹ اور دو وزیراعظم، کئی وزیراعلیٰ اور اہم وزارتوں پر بیٹھے لوگوں نے علاقے کے لیے ایک پائی تک کا کام نہیں کیا۔

Facebook Comments
(Visited 79 times, 1 visits today)

متعلق انور بلوچ

انور بلوچ
جعفرآباد کا یہ نوجوان اِن دنوں اسلام آباد میں تعلیم حاصل کر رہا ہے۔ پڑھنے کے ساتھ ساتھ سیاسی اور سماجی حالات پر بھی خامہ فرسائی کرتے رہتے ہیں. ای میل: anwar.zehri@gmail.com