لِکّھو

براہوئی افسانہ
نوشتہ : حسن ناصر

چِلّہ نا بھلّا ننک اِرَغ کننگ آن پد میرل تینا کمرہ غا بس گیس نا ہیٹر ءِ لگیفے ، موبائل ءِ چارج آ خلک، بالشت ئسے آ ٹیک تِس ،اسہ افسانہ نا کتاب ئس ارفے ۔ ایہن ہم او ایم ۔ایس۔سی نا رزلٹ نا انتظار ٹ ۔۔۔۔ پین خاصو کاریم ہلَّو تہ باوہ تہ محکمہ صحت اٹ ملازم اَس ، میرل تینا باوہ نا اسٹ اِنگا مار اس او اسٹ آ ایڑ نا اسٹ آ ایلم ۔
میرل بھاز ماخول طب اَنا بندغ ئس اَس ۔ اودے ہچو مسڑ ئس وڑتویکہ ۔ او یَکّا سوچاکہ ۔۔۔ کنا تغ تا گودی امرو س مرو۔۔۔؟، او شرافت نا بڈ ءِ یکا تینا شرافت نا محنتی آ کوپہ غا تے آ چریفیکہ ۔ اونا باوہ نا خنک اوڑا ملِنگارہ ۔
میرل افسانہ نا کتاب نا پنّہ غاتے دامون ایمون کریسا ۔۔۔۔ اونا موبائل نا گھنٹی نا زمبار مس اوموبائل ءِ ہرفے ۔۔۔ نمبر تو پوسکنو نمبر ئس اَس ۔۔۔اونا مون آ حیرانگی تالان مس۔۔۔ ۔کہ دا دیر مرو ءِ او موبائل ءِ خفا تخا ، ھیلو کننگ آن مست اسہ ہنینو توار اَس اونا خف تا پڑدہ غاتیٹی لگا ۔۔۔۔ دا توار اسہ مسِڑ ئسے نا اَس دا توار نا چاشنی اونا خف تے آن مدام اونا است اَٹ دڑاکہ ۔ اندا توار اودے اسہ کڑمبو خیال ئسے ٹی اختہ کرے ولدا اسہ وار اَتون او ہترم کرے تینا خیال آن پیش تمیسا ۔۔۔بیرہ اوڑتون ہیت کننگ کن لوظ ہلَو ۔۔۔ بھاز کوشست آن گڈ او ہیلو کرے ۔۔۔ نم دیر ۔۔۔؟
مسڑ ۔۔۔ !نی ندیم ہیت کننگ اُس ۔۔۔؟
میرل ! ندیم ۔۔۔؟حیرانی آ لہجہ ٹی ۔۔۔ ندیم نما انت مریک ۔۔۔؟
مسڑ ! او کنا تاتہ نا مارے ۔۔۔اودے کلہو ئس تروئی اَس ۔۔۔اونا لمہ اوڑکن کلہو کرینے بھاز وخت اَنا ءِ او ہاسٹل آن ہُرا غا بتہ نے ۔
میرل،،، معصوم آ لہجہ ٹی ،جی ۔۔۔دا نمبر ندیم نا اف ۔ انداڑتون موبائل بند مس ءُ میرل نا است اَنا توار تیز مس ۔۔۔ اونا تہہ اَنا جوزہ غاک بڑزا مسُر ہراتے بھلو وخت ئسے نا ءِ او تینا اُست اَٹ ڈکھاسُس ۔ او کتاب ءِ تینا سینہ غا تخا ، زند اَٹی اولیکو وار اودے اسہ توار ئس وڑاسُس۔۔۔ دن کہ اودے اونا گم مروکو گڑا ئس مِلّا ۔۔۔ داسہ اندا سوچ اَٹ پورا نن موبائل آ اندا نمبر ءِ ہُراکہ سوچاکہ۔۔۔کہ آخر امر دا مسِڑ تون ولدا حال و احوال کیو ۔۔۔؟خیر صحب تما میرل ہُرا نا ماس آ تینا باغیچہ ٹی ۔۔۔۔ درخت ئسے نا کیرغان توسہُیل ءُ پن ریچ نا سبب آن روشنائی درخت اَنا شم تے آن سیم کریسا ۔۔۔۔۔۔اونا مون آ تماکہ اونا دُوک پیشانی ٹی خلوک ۔۔۔۔۔۔ داسہ اودے اندھنو مسِڑ ئسے تون عشق مسونے ہرانا او بیرہ توار ءِ بِنگونے ،۔۔۔۔۔۔ او بیدیس خننگ آن است اَنا واپاری ءِ کرینے ۔
دے درست اونا خیال ءُ سوچ آتے آن مسڑ نا جادو ئی آ توار تینا کوزہ ءِ کریسُس ۔شام خیسُنی کرے دئے کی ہلینگ آن گڈ او تینا ہُرا غا بس ۔۔۔ ہُراٹی ہم او ہر گڑاغان بے چکار تینا خیال اَٹ گم وگار دھنکہ کس نشہ کے ٹُن مرے ۔۔۔۔۔۔ اِرَغ کننگ کن توس ولے باخوک اونا بَن آن ہِن توَسہ ۔۔۔۔۔۔منہ باخو زورٹ کنُگ،بش مس ۔۔۔۔۔۔ تینا کمرہ ٹی ہنا ۔ او تین تون تینٹ فیصلہ کرے کہ۔۔۔۔۔۔مسڑ نا نمبر آ ہرُو برُو کال کروئی ءِ ۔۔۔۔۔۔و ۔۔۔۔۔۔ اودے پاروئی ءِ کہ کنے نیتون عشق مسونے ۔۔۔۔۔۔ولے اودے اسہ عجیبو خوف اَس پلویڑ کریکہ ۔۔۔۔۔۔ اگہ اونا کنڈان جواب بف تو۔۔۔؟؟؟؟؟ خیر توکّل کرے او مسڑ نا نمبر ءِ خلک ۔ ساعت ئسے آن گڈ مسڑ تینا ہنینا توار تون ۔۔۔۔۔۔۔
ہیلو !!!! داسہ میرل اونا ہنینا توار ءِ بننگ تون اَبکّہ مس۔۔۔۔۔۔داسہ اوڑتون لوظ ہلو کہ ہیت اَنا بِنا ءِ او ہراکان کے۔۔۔۔۔۔آخر ہمت کرے پارے !!!!!! ای میرل اُٹ درُو نم کنے آرد اَٹ فون کریرے ۔۔۔۔۔۔؟
مسڑ ! نم دیر ہیت کننگ اُرے دیر تون نمے ہیت کروئی ءِ ۔۔۔۔۔۔ ای رد کریٹ تو رد ءِ خدا بشخک ءُ اگہ ای رد کریٹ ، نم تو رد کپّہ بو ۔۔۔۔۔۔؟
میرل ! راست ہریفِس درو نما ہنینا توار کنا است اَٹ دڑا ۔۔۔۔۔۔ ۔کنے اُست وار تِتو،ای نمے فون کریٹ۔۔۔۔۔۔ خدا ءِ منّیرئے فون ءِ بند کپّیر ے۔۔۔۔۔۔!
مَسڑ ! واہ۔۔۔۔۔۔ دا عجیبو ہیت ئسے نی کنے خن تہ نُس ،،،،، بس بیرہ توارآ ۔۔۔۔۔۔؟
میرل ! جی او ای بیدیس خننگ آن اُست اَنا سودا ءِ کرینُٹ۔۔۔۔۔۔!
مَسڑ ! نم خواجہ ہراڑے تولیرے۔۔۔۔۔۔ ؟
میرل تینا خلق اَنا پن ءِ پاریسا ۔۔۔۔۔۔۔
مسڑ ! نمے انت سماءِ کہ ای دیر اُٹ او امر و مسڑ ئسے اُٹ ۔۔۔۔۔۔؟ نم تینا وخت ءِ برباد کپّبو تو جوان ءِ ،،،،،،،، کنے جوان سمائے کہ نم کونا لوفر ءُ لونڈ آک مَسِن تا نمبر آتے ہلیرے وُ تینا ساعت تیری ءِ کیرے ،،،،،،بس بیرہ تینا ساعت تیری کن۔۔۔۔۔۔
نہ۔۔۔۔۔۔ خدا چائک ای ساعت تیری والا مار اَس افّٹ ،،،،، کنے ساعت تیری کروئی مسّکہ تو یونیورسٹی ٹی چندی مسِنک نن تون اوار خوانارہ ،،،،، اگہ کنے ساعت تیری کروئی مرے تو کنا کلاس فیلو تا نمبر آک کنتون اریر ۔۔۔ اندن او مسڑ ءِ تینا ہیت آتے ٹی کائل کننگ نا کوشست اَٹ ۔۔۔۔۔۔ داسہ مسڑ ءِ باور مس کہ دا جوانو مار ئسے ۔۔۔
میرل ! نما پن انت ءِ۔۔۔ ؟
مسڑ ! ماہ زیب ءِ ۔۔۔
اندن اڑتوماتا بغیر خننگ آن مہرو مابت نا بِنأ مس ۔ داسہ ہراتم شام دے ءِ تینا پہلو ٹی ڈکھّاکہ، نن تا اولیکو بشخ اَٹ اوفتا ہیت و گپ شروع مسکہ۔۔۔ ۔اوفک تینا اُست اَنا ہیت آتے اسہ ایلو آن ڈکھیتوسہ ۔۔۔۔اوفتا مہرو مابت ، سچائی و خلوص نا بنداؤ آ مہر اَنا ماڑی آ تخوک اس ۔۔۔۔۔۔ تاکہ اوفک اسہ ایلو تون ہیت گپ کتوسہ اوفتا نن تیر متویکہ ۔۔۔۔۔۔۔ہرادے ماہ زیب آستا ہُرا غا مہمان بننگ نا سوب آن ہیت و گپ کِن اوفتے موقع دو بتو کہ ۔۔۔ تو ہڑتوماک نن درست اسہ ایلو نا یات ٹی شوگیر خلکرہ ۔ اوفتا اسہ ایلو تون داہیت و گپ آتے اِرا سال گدرینگا ۔۔۔
وخت اَنا رفتار تون اوفتا عشق پین سوگہَو مریسا ہنا ۔۔۔۔ ماہ زیب بھاز باشعور و لائخو مسڑ ئس اَس ۔ یکا میرل ءِ خواننگ ءُ جوانو پوسٹ ئس ہلینگ نا پاریکہ۔۔۔اوفک اقرار کریسُر کہ ہراتم نی جوانو پوسٹ ئس ہلکُس، گڑا نن اسہ ایلو تون مِلّون و اسہ ایلو ءِ خنون ۔۔۔ ۔ماہ زیب نا دا حوصلہ غاک میرل ءِ مُستی ہننگ نا جوزہ ءِ تِسُّرہ۔۔۔ او جم و جوش اَٹ تیاری ٹی لگوک اَس ۔منہ تُوہ آن گڈ مقابلہ نا منہ پوسٹ بسُر ، میرل دا مقابلہ نا امتحان اَٹ اوّل بس ءُ بھلّو افسر ئس لگا۔ داسہ اونا تُغک حقیقت نا دروشم آن خڑک بسُر ۔ او ماہ زیب ءِ فون کرے و اوڑان مستائی ہلنگ کن اودے دا خبر ءِ بنیفے ۔ داسہ ماہ زیب نا است ہم میرل ءِ خننگ کن بھاز تلوسہ کریکہ ۔
اسہ دے ماہ زیب میرل ءِ فون کرے ، کہ ننا اُرا والاک پگہ برام ئسے آ ہننگٹی او ای تنیا مروٹ ،،،، کنا اُست خوائک کہ نن داسہ اسٹ ایلو ءِ خنِن۔۔۔ بھاز انتظار مس ۔۔۔۔۔۔ ولدا نم کن کِن رَسال ببو ۔۔۔۔۔۔ ہمو شام میرل مچا نن ءِ انتظار اَٹ خلک ،کہ ہرا تم صأف اَنا استار پاش کروو ای تینا زند اَنا ہنین آدے ءِ خنوٹ ۔۔۔۔۔۔میرل سہُب اَنا وختی بش مس غسل کرے پیہُنو جوڑہ ئس بینا ، عطرو گندی خلک، تینے تیارکرے او ماہ زیب کِن اسہ ہار ئس ءُ مٹھائی نا ڈبہ ئس ہلک ۔۔۔۔۔۔ ماہ زیب نا اونا ہیت و گپ آک دانیامٹ مریسا ہنارہ ۔۔۔۔۔۔ موبائل آ ماہ زیب اُرا والا تا ہننگ نا ڈس ءِ تِس او اوڑتون اوار اوار اُرانا ہم ڈس ءِ تریسا ہناکہ۔۔۔آخر میرل ماہ زیب نا درگہ نا مون آ سر مس ،،،، درگہ نا شم تے آن خیسُن آ پُچ آتون ماہ زیب سلوک انتظار اَٹ ۔۔۔۔۔۔ میرل دے اسکہ ماہ زیب ءِ خنا ۔
سبحان اللہ طوبے آنبار لگاکہ میرل اودے خننگ تون اونا کنڈا ہنا ،۔۔۔۔۔۔ مٹھائی نا ڈبہ ءِ ،ہار ءِ اونا دوٹی تس ۔۔۔داسہ دنیا غان بے فکر اسہ ایلو نا خن تے ٹی اندھُن گم ، دنکہ سال آتا پند آن گڈ اسہ بندغ ئس تینا مِزّل آ سر مریک ۔۔۔۔
میرل ! نم تو کنا گمان آن زیات زیبا۔۔۔۔۔۔ ای پگہ تینا لُمہ ءُ باوہ آستے رَسال مون اِیتوہ ۔
ماہ زیب ! بر گدرینگ اُراٹی کس اف ۔۔۔۔۔۔۔
میرل ! نہ گودی ای تاکہ تینا لُمہ ءُ باوہ ءِ رَسال کن مون تِتہ نُٹ ہرا غیرت تون نما چوکاٹ ءِ بے بالیو ۔۔۔؟ ننا صبر اَنا میوہ ننے ضرور ملیک ۔
قسمت نا گوازی یا تقدیر نا بدنصیبی ،۔۔۔ ماہ زیب اسہ وار اَتون چیہانٹ ئس خلک ۔۔۔۔۔۔، ابوءِ کنا ساہ اَکن کنے آ بھَلہ تمّا ۔۔۔میرل چک ءِ ہڑسا یخ تفے ،،،،، ہراتم تینا پد آن ماہ زیب نا ایلم ءِ سلوک خنا۔۔۔۔۔۔اونا ایلم ہکّل تون اندنو غُورانٹ ئس خلک نی پا اونا توار آن ڈغار کپ مس ۔۔۔۔۔۔دِکھہ تس اڑتوماتے اُراٹی گلی ءِ بند کرے ۔۔۔۔۔۔ تینا غیرتی آ جوزہ توننے اندا دے اَکن سنبھالان یلئی !!!! نما دوا موت ءِ بیرہ موت ۔۔۔۔۔۔ پسٹول ءِ کشّا میرل نا کنڈا توریسا۔۔۔ اول مٹ ءِ نا خَلیوہ ۔۔۔۔۔۔ ماہ زیب اوڑا جھولی توریسا ۔۔۔ خدا ءِ منّہ، کنے سُم ئسے نا گواچی کر۔۔۔۔۔۔ اونا ہچو قصور اَس اف !!!! او معصوم ئسے او ہچ کتہ نے ۔۔۔۔ماہ زیب نا خڑینک آک اونا گلابی آ کلک آتے آ وہارہ۔۔۔ ٹکّا تون میرل نا سینہ غان سم ایپار مس ۔۔۔ ماہ زیب تینے اونا سینہ غا بِٹے ،ایلو سُم ماہ زیب نا بج آن ایپار مس ۔ ماہ زیب نا کاٹم میرل نا سینہ غا اڑتوماک دم تِسُر ۔۔۔۔ انت دا سیاہ کار مسُر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔؟

Facebook Comments
(Visited 30 times, 1 visits today)

متعلق براہوی حال حوال

براہوی حال حوال