مرکزی صفحہ / سماجی حال / نوشکی: کلی قادر آباد میں خسرے کی وبا سے 11 کمسن بچوں کی موت، میڈیکل کیمپ کا انعقاد

نوشکی: کلی قادر آباد میں خسرے کی وبا سے 11 کمسن بچوں کی موت، میڈیکل کیمپ کا انعقاد

برکت زیب

نوشکی: کلی قادر آباد میں خسرے کی وبا نے 11 کمسن بچوں کی زندگی لے لی. علاقے میں خوف و ہراس اور تشویش کی لہر دوڑ گئی. اطلاع ملتے ہی میڈیکل ٹیم متاثرہ علاقے میں پہنچ کر متاثرہ بچوں کو ویکسین دی.

تفصیلات کے مطا بق نوشکی کلی قادر آباد میں گزشتہ 72 گھنٹوں کے دوران خسرہ کی جان لیوا وبا پھیلنے سے گیارہ کمسن بچے موت کے منہ میں چلے گئے اور کئی بچے خسرہ سے متاثر جو زندگی اور موت کی کشکمش میں مبتلا ہیں. اطلاع ملتے ہی محکمہ صحت نوشکی کی میڈیکل ٹیمیں کلی قادر آباد کے متاثرہ علاقے میں پہنچ کر بچوں کو ویکسین دی.

اس موقع پر ڈی ایچ او نوشکی حمید بلوچ نے میڈیا نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں اطلاع ملی تھی کہ کلی قادر آباد میں خسرے سے کچھ بچے متاثرہ اور کچھ کی اموات ہوئی ہیں. فوری طور پر کلی قادر آباد کے متاثرہ خاندانوں کے گھر پہنچ کر ہماری میڈیکل ٹیم کے ہمراہ ڈاکٹرز اور پیرامیڈیکس نے علاج معالجہ شروع کردیا. انھوں نے کہا کہ یہاں پر اکثر ویکسین کے رفیوزر رہے ہیں. ویکسین کے وقت یہ خاندان انکاری رہے ہیں، جن کی تصدیق ہمارے ٹیموں نے بھی کی ہے اور جن بچوں کی اموات ہوچکی تھی ان کے ورثا ان بچوں کے ویکسین والے کارڈ مانگے گئے تو ان لوگوں کے پاس کوئی کارڈ نہیں تھا اور جن بچوں کو کارڈ کے ذریعے ویکسین کیا گیا تھا وہ تندرست دکھائی دے رہے ہیں.


ڈی ایچ او نوشکی حمید بلوچ نے مزید کہا کہ ان خاندانوں کا اکثر وقت ہمسایہ ملک افغانستان بھی آنا جانا پڑتا ہے، اور حال ہی میں کچھ خاندان افغانستان سے بھی آئے ہیں. یہ ہر ویکسین کے وقت رفیوزل رہے ہیں.

اس موقع پر کلی قادر آباد کے مقامی کونسلر مولوی عبدالصمد مینگل نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ کلی قادر آباد میں گزشتہ تین دنوں سے گیارہ بچوں کی اموات ہوچکی ہیں، اور کئی بچے متاثر ہیں. انھوں نے کہا کہ ہم نےگھر گھر جاکر فوت شدہ گیارہ بچوں کی لسٹ بنائی ہے. محکمہ ہیلتھ کو اطلاع دینے کے بعد میڈیکل ٹیم علاقے میں پہنچ کر متاثرہ بچوں کی علاج شروع کردیا ہے. آخر میں انہوں نے مطالبہ کیا کہ کلی قادر آباد میں اس وبا کا سدباب کیا جائے تاکہ مزید بچے اموات کا شکار نہ ہوں۔

دوسری جانب محکمہ صحت نوشکی اور ایف سی بلوچستان کی جانب سے کلی قادر آباد گرلز مڈل سکول میں خسرے سے بچاؤں کے لئے میڈیکل کیمپ کا انعقاد کیا گیا جس میں ایک ہزار سے کم عمر بچوں کو خسرے کی ویکسین اور ٹیکہ لگایا. اس موقع پر ایم پی اے نوشکی حاجی میر غلام دستگیر بادینی نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے گیارہ معصوم بچوں کی وفات پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ متاثرہ خاندانوں کے غم میں برابر کے شریک ہیں اور مزید بچوں کو اس موذی مرض سے بچانے کے لیے محکمہ صحت اور فرنٹیر کو ر کے ڈاکٹرز اور عملہ اقدامات کر رہے ہیں.

انھوں نے کہاکہ گزشتہ دنوں خسرہ سے زیادہ تر اموات ان بچوں کی ہوئی ہے جنھیں حفاظتی ٹیکے نہیں لگائے گئے ہیں. لہٰذا والدین اپنے بچوں کی زندگیوں کو محفوظ بنانے کے لیے محکمہ صحت کے مراکز اور گھر گھر جانے والی ٹیموں سے بچوں کو حفاظتی ٹیکے لگوائیں.

Facebook Comments
(Visited 26 times, 1 visits today)

متعلق برکت زیب سمالانی

برکت زیب سمالانی
نوشکی میں مقیم برکت زیب کل وقتی صحافتی کارکن ہیں۔ مختلف میڈیا ہاؤسز کے ساتھ کام کا تجربہ رکھتے ہیں۔ علاقائی مسائل کی رپورٹنگ اور تبصرہ نگاری کرتے ہیں۔ Email: brkat.zaib@gmail.com