مرکزی صفحہ / سماجی حال / لسبیلہ میں سماجی تنظیموں کے زیراہتمام تعلیمی ڈائیلاگ کا انعقاد

لسبیلہ میں سماجی تنظیموں کے زیراہتمام تعلیمی ڈائیلاگ کا انعقاد

رپورٹ: خلیل رونجھا

وائس چانسلر لسبیلہ یونیورسٹی دوست محمد بلوچ، ایڈنیشل کمشنر لسبیلہ طارق مینگل، اسٹنٹ کمشنر محمد یونس سنجرانی، ماہر تعلیم عبدالعزیز، ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر حاجی نوید ہاشمی، پروفیسر جلال فیض کا پینل ڈسکشن میں حصہ لیا.

ان کا کہنا تھا کہ تعلیمی ترقی کے لیے سب کو مل کر کام کرنا ہوگا. لسبیلہ یونیورسٹی انسانی وسائل کے فروغ میں بھرپور کردار اد کر رہی ہے. تعلیم کے بارے میں نوجوانوں کی سوچ و فکر قابل ستائش ہے.

تفصیلات کے مطابق لس بیلہ کی معروف سماجی تنظیم وانگ، این ار ایس پی اور الف اعلان کے زیر اہتمام تعلیمی پبلک فورم کا انعقاد گزشتہ شام بیلہ کے مقامی ہوٹل میں کیا گیا جس میں لس بیلہ بھر سے سماجی کارکنان، اساتذہ اور طالب علم رہنماؤں نے شرکت کی. اس موقع پر وانگ کے ڈائریکٹر قیصر رونجھو نے سہل کاری کی تقریب سے این ار ایس پی لسبیلہ کے ضلعی پروگرام آفیسر ارشد اقبال اور الف اعلان کے خلیل رونجھو نے لسبیلہ کی تعلیمی رپورٹ اور ڈائیلاگ کے بنیادی مقاصد شیئر کیے. اس موقع پر پینل ڈسکشن میں شریک مہانوں نے مختلف تعلیمی موضوعات پر اپنے خیالات کا اظہار کیا جن میں ایڈنیشنل کمشنر لسبیلہ طارق مینگل، اسسٹنٹ کمشنر محمد یونس سنجرانی، ماہر تعلیم عبدالعزیز رونجھو، ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر حاجی نوید ہاشمی، لسبیلہ یونیورسٹی کے پروفیسرجلال فیض شامل تھے.

مقررین نے تعلیمی ترقی کے حوالے سے لسبیلہ میں موجود وسائل اور درپیش چیلنچز کا ذکر کیا اور کہا کہ لسبیلہ کی زمین بہت زرخیر ہے. یہاں پر ادارے مسائل کے باوجود بھی کسی حد تک بہتر تعلیمی کارکردگی کا مظاہرہ کررہے ہیں. تعلیمی داخلے کی شرح اچھی ہے جس کے لیے غیر سرکاری تنظیموں اور والدین کمییٹوں کا اہم کردار بنتا ہے کہ وہ پرائمری سطح پر ڈراپ آؤٹ کی شرح کو کم کریں کیونکہ لس بیلہ میں لڑکوں اور لڑکیوں کی سکول چھوڑنے کی شرح بہت زیادہ ہے. اسکولوں کے اندر وسائل فراہم کیا جارہا ہے، کتب کی فراہمی جلد مکمل ہوجائے گی.

مقررین نے کہاکہ لسبیلہ میں کیریئر کونسلنگ کے پروگرام کی اشد ضرورت ہے جس سے نوجوانوں کی رہنمائی کی جاسکے اور ان کو بتایا جاسکے کہ کس فیلڈ کے اندر تعلیم کے اہم مواقع موجود ہیں۔

لس بیلہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر دوست محمد بلوچ نے فورم کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ نوجوانوں کے مستقبل کو بدلنے کے لیے تعلیم ہی بہترین عمل ہے اور تعلیم کے حصول کے بغیر دنیا کے چیلنجز کا مقابلہ نہیں ہوسکتا ہے. لسبیلہ میں لس بیلہ یونیورسٹی نوجوان کے لیے سیکھنے اور سکھانے کی بہترین درس گاہ ہے جہاں لسبیلہ کے نوجوانوں کے لیے ہر ڈیپارٹمنٹ کے دروازے کھلے ہیں. یہی وجہ سے کہ لسبیلہ کے نوجوانوں کو زیادہ مواقع فراہم کیے جاتے ہیں. لسبیلہ میں اس طرح کے پروگرام بیلہ کا سماجی و علمی حسن ہے اور یہ ایک خوش آئند اقدام ہے کہ یہاں کے لوگ تعلیم کے بارے میں اچھی سوچ و فکر رکھتے ہیں. انہوں نے مذید کہا کہ تعلیم کے حصول کے لیے تکالیف کو برداشت کرنا پڑتا ہے. کراچی نزدیک ہے، لس بیلہ کے لوگ بنیادی تعلیم کے لیے ان اداروں تک اپنی رسائی ممکن بناسکتے ہیں. انہوں نے کہا کہ لسبیلہ کے اسکول میں تعلیمی عمل بہتر ہے اور اس کو مذید بہتر کرنے کے لیے آپ تمام لوگ مل کر آواز کو بلند کریں. انہوں نے مذید بتایا کہ یونیورسٹی کے اند رقائم انٹر کالج کا شمار بلوچستان کی بہترین کالجز میں ہوتا ہے. نوجوان تعلیمی ترقی کے لیے اپنی تمام تر صلاحتیں بھروئے کار لائیں اور سماجی تنظیموں کی طرف سے اس طرح کی ڈائیلاگ کی سرگرمی کا انعقاد کرنا یقیناََ لسبیلہ میں ایک منفرد آئیڈیا ہے. انہوں نے بتایا کہ گزشتہ کئی سالوں میں یہ پہلا موقع ہے جب لس بیلہ میں مجھے اس طرح کی سرگرمی میں مدعو کیا گیا جس کا سہرا پڑھے گا لسبیلہ بڑھے گا لسبیلہ تحریک کے نوجوانوں کو کو جاتا ہے.

تقریب کے آخر میں سوال و جواب کے سیشن میں نوجوانوں نے پینل کے شرکا سے سولات کیے جن کا مہمانوں نے نہایت بہتر طریقے سے جوابات پیش کیے. تقریب میں لسبیلہ بھر سے نوجوان شریک تھے جس میں وائس آف یوتھ کے غلام حسین گلزار، حب کے سماجی کارکن فرید دلاری، عبداالمنان بلوچ، شفع مری، این آر ایس پی کے ارشد اقبال، ظہیر احمد، عبدالقدوس، فواد عمر، عبدالحفیظ، یوسف رونجھو، او ایس ڈی آئی کے راشد بٹ، اسماعیلانی ویلفیئر کے ایم عیسی رونجھو، لسبیلہ اسٹوڈنس سوسائٹی کے سلال شفع بلوچ، نواز احمد، آغاز کے قادر بخش، ایم بی کھوسہ، وانگ کے ظہیر احمد، عبدالقادر رونجھو، شکور رونجھو، این سی ایچ ڈی کے زاہد بلوچ، بیلہ پریس کلب کے قادر بخش، مبشر کھوسہ، شاہجان شاہ، یونیسیف کے عبدالرشید الگ سمیت سول سوسائٹی سے تعلق رکھنے والے بہت سارے نوجوانوں نے شرکت کی.

Facebook Comments
(Visited 48 times, 1 visits today)

متعلق خلیل احمد رونجھا

خلیل احمد رونجھا
خلیل احمد رونجھو بیلہ سے تعلق رکھتے ہیں۔ کل وقتی سماجی کارکن ہیں۔ سماجی معاملات پر ہی لکھنا بھی ان کا مشغلہ ہے۔