مرکزی صفحہ / سیاسی حال / کوئٹہ: نوابزادہ گزین مری ائیر پورٹ پہنچتے ہی گرفتار، نامعلوم مقام پر منتقل

کوئٹہ: نوابزادہ گزین مری ائیر پورٹ پہنچتے ہی گرفتار، نامعلوم مقام پر منتقل

نیوز ڈیسک

نوابزادہ گزین مری کو ائیر پورٹ پہنچتے ہی پولیس نےگرفتار کر لیا.

نوابزادہ گزین مری شارجہ سے پی کے جی 9 کے ذریعے کوئٹہ پہنچے تھے. ان کے استقبال کے لیے لوگوں‌کی بڑی تعداد موجود تھی.

نوابزادہ گزین مری کے کے وکیل ارباب محمد طاہر نے میڈیا سےگفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گزین مری اپنے 8 ساتھیوں کے ہمراہ کوئٹہ پہنچے تھے.

گزین مری، نواب خیر بخش مری کے چھ بیٹوں میں سے دوسرے نمبر پر ہیں. پہلے چنگیز مری، دوسرے نمبر پر گزین مری، پھر بالاچ مری، چوتھے نمبر پر حمزہ مری، پھر حیر بیار مری اور ان کے بعد مہران مری ہیں.

1993 سے 1996 تک مسلم لیگ ن کی سیٹ پر صوبائی وزیر داخلہ رہے. نواب مری کے بیٹوں میں چنگیز مری موجودہ مخلوط حکومت میں ایم پے اے ہیں. بالاچ مری افغانستان میں ہلاک ہوئے تھے جبکہ حیر بیار مری اور مہران مری کالعدم تنظیم کے سربراہ ہیں اور بیرون ملک میں ہیں.

گزین مری آج شارجہ سے 18 سالہ خود ساختہ جلاوطنی کے بعد جب کوئٹہ ائر پورٹ پہنچے تو انہیں جسٹس نواز مری کے قتل کے کیس میں پولیس نے گرفتار کرلیا. ان کی آمد کے موقع پر مری قبائل کی بڑی تعداد پرتپاک استقبال کے لیے پہنچی تھی.

انہوں نے کہا کہ ہم نے نوابزادہ گزین کی جسٹس نواز مری قتل کیس میں عدالت سے حفاظتی ضمانت حاصل کر رکھی تھی. حفاظتی ضمانت کے باوجود پولیس نے گزین مری کو گرفتار کر کے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا.

ارباب محمد طاہر نے کہا کہ حکومت بتائے نوابزادہ گزین مری کو کیوں گرفتار کیا گیا.

یاد رہے جسٹس نواز مری کو 7 جنوری 2000 کو قتل کیا گیا تھا.

Facebook Comments
(Visited 323 times, 1 visits today)

متعلق نیوزڈیسک

نیوزڈیسک
حال حوال بلوچستان سے متعلق خبروں، تبصروں اور تجزیوں پہ مبنی اولین آن لائن اردو جریدہ ہے۔ نیوز ڈیسک سے شائع ہونے والی خبریں مختلف ذرائع سے حاصل کی جاتی ہیں، جن کی مکمل ذمہ داری ادارہ پہ عائد نہیں ہوتی۔