مرکزی صفحہ / اسپیشل ایڈیشن / حال حوال کا سال / حال حوال — جاوید بلوچ‎

حال حوال — جاوید بلوچ‎

جاوید بلوچ

"حال حوال اور سفر صحافت” کی جگہ شاید مجھے لکھنا یہ چاہیے تھا کہ سفرِ صحافت حال حوال تک، مگر میری کمزور گرائمر میں "تک” کے لفظ میں ایک قسم کا اختتام نما سا ذائقہ محسوس ہو رہا ہے اور ویسے بھی نہ تو سفر صحافت کبھی رکتا ہے اور نہ ہی ایسے پلیٹ فارم جو صحافت کے لیے قائم ہوتے ہیں. حال حوال کو مبارک باد میں اس لیے نہیں دیتا کیوں کہ وہ مبارک باد حال حوال مجھے پہلے سے خود دے چکا ہے. اس لیے میں حسب روایت شکریہ ادا کروں گا اس مبارک باد کا جسے حال حوال نے میرے قلم کو دیا ہے.

ذرا تصور کریں کہ کوئی ایسا قلم جس کو نہ تو گرائمر کا پتہ ہو نہ تلفظ کا اور نہ لکھنے کے روایتی طور طریقوں کا، اس کے قلم کو یہ احساس دلایا جائے کہ تم بھی اظہارِ رائے کا حق رکھتے ہو، تم لکھ سکتے ہو، بس اس سے بڑھ کر اور بڑی مبارک باد کیا ہوگی؟

میرے ایک استاد محترم ہمیشہ کلاس میں کہا کرتے تھے کہ ہم روایت کے پتلے بن چکے ہیں بلکہ ہمیں بنا دیا گیا ہے.

کہا جاتا ہے کہ سب سے اچھی کلاس وہی ہے کہ جس کے سامنے سے پرنسپل صاحب گزر رہے ہوں اور کلاس میں سناٹا ہو… مگر ایسا کوئی کیوں نہیں کہتا کہ بہترین کلاس وہ ہے جہاں پرنسپل گزرتے وقت رک جائے پھر اپنے حواس خمسہ میں سے سننے کی حس کو استعمال کرے، پھر سمجھنے کی کوشش کرے اور پھر کچھ سنے اور سنائے بغیر نہ جا سکے. خاموش کرانا کون سی بڑی بات ہے. اگر دم ہے تو کسی کو آواز دلواؤ، اس کے الفاظ کو زبان دلواؤ، پھر ہوئی شاباشی ناں…

بس یہی سفر ہے صحافت کا اور قابلیت ہے حال حوال کی.

ہاں صحافت تو کسی بھی طرح زندہ ہی رہتی ہے مگر اس کے انداز میں بدلاوا ضرور ہوتا ہے. اگر کلاس کو اچھا دکھانے کے لیے خاموش ہی رکھنا ہے تو کلاس بولے گی ضرور مگر گیٹ کے باہر جہاں پھر استاد اور کسی فلمی ولن کے ناموں میں فرق نہیں رہے گا. جہاں ایسی روایات قائم ہوں وہاں قلم لکھیں گے ضرور مگر اخلاقیات کو خاموش کروا کر گلی کوچوں کی دیواروں پر یا وہاں بھی نہیں تو مساجد کی لیٹرین کی دیواروں پر تو ان کو کوئی روک نہیں سکے گا.

حال حوال نے پتہ نہیں کیا کیا یا کیا نہیں کیا، مگر سوشل میڈیا کے اس سیلف، سیلفی دور میں ایک ایسی جگہ ضرور قائم کی جہاں نرم روایت کے ساتھ صحافت کو صاف رہنے کا موقع دیا، جس کے لیے میں خود اپنے قلم کو مبارک باد اور حال حوال کا شکریہ ادا کرتا ہوں.

Facebook Comments
(Visited 141 times, 1 visits today)

متعلق جاوید بلوچ

جاوید بلوچ
نوجوان طالب علم جاوید بلوچ کا تعلق گوادر سے ہے۔ سماجی معاملات پہ لکھنا ان کا شوق ہے۔ Email: bjaved739@gmail.com