مرکزی صفحہ / تصویری حال / ہمارے بچے امتحان کیسے دیتے ہیں!

ہمارے بچے امتحان کیسے دیتے ہیں!

حال حوال

ابھی کل ہی ہم نے تصویری حال میں ایک تصویر میں دکھایا تھا کہ بلوچستان کے بچے اسکول کیسے جاتے ہیں. جہاں معصوم بچے بسوں کی چھتوں اور سیڑھیوں پر لٹک کر سکول جا رہے تھے.

اب ذرا یہ دیکھیے کہ ہمارے یہی بچے امتحان کیسے دیتے ہیں. اتفاق سے گذشتہ تصویر بھی بیلہ کے بچوں کی تھی، اور یہ تصاویر بھی بیلہ ہی سے موصول ہوئی ہیں. ان تصویروں اور سطروں کے لیے ہم خلیل رونجھا کے شکرگزار ہیں.

"یہ مناظر ضلع لسبیلہ کے تاریخی شہر بیلہ کے گورنمنٹ بوائز ہائی اسکول کے امتحانی ھال کے ہیں جہاں پانچویں جماعت کے امتحانات ہورہے ہیں، جس میں بیلہ کے مختلف پرائمری اسکولوں کے 200 بچے شریک ہیں،حالیہ دنوں میں بیلہ میں شدید گرمی ہے، درجہ حرارت 47 سنٹی گریڈ تک جا پہنچتا ہے. بجلی کی طویل لودشینڈنگ کی صورت حال میں اس امتحانی ہال میں پسینے سے شرابو ان معصوم بچو ں کو جن کی عمر یں دس،گیارہ سال کے درمیان ہیں، بند دروازہ و کھڑی اور بغیر پنکھے و بجلی کے بیٹھاکر امتحان لیا جا رہا ہے.لمحہ فکریہ یہ ہے کہ یہ اسکول گذشتہ تقریبا پندرہ سالوں سے ریگولر ہیڈماسٹر کی تعیناتی سے محروم ہے. شنید میں اَیا ہے کہ گذشتہ سال جون میں ہال کی رپیرئنگ کی مد میں بی اینڈ آر کے توسط سے تین لاکھ کا کام ہوا مگر ہال کی موجودہ صورت حال یہ ہے کہ بجلی کی موجودگی کی صورت میں بھی ہال میں لگے دس پنکھوں میں صرف ایک عد د پنکھا ہی فنکشنل ہے.”

1243

Facebook Comments
(Visited 260 times, 1 visits today)

متعلق خلیل احمد رونجھا

خلیل احمد رونجھا
خلیل احمد رونجھو بیلہ سے تعلق رکھتے ہیں۔ کل وقتی سماجی کارکن ہیں۔ سماجی معاملات پر ہی لکھنا بھی ان کا مشغلہ ہے۔